اگر بات ہو گرمی کم کرنے کی تو آخر ہم ہرے دھنیے کو کیسے بھول سکتے ہیں؟ اس ترکیب میں ہم آپ کو ہرے دھنیے والے چاول بنانا بتائیں گے جو آپ کے معدے کے لئے مفید اور گرمی میں ٹھنڈک بخشنے والی غذا ہے، اس کے لئے ایک پتیلی میں تھوڑا تیل ڈالیں، اس میں زیرہ ادرک لہسن ہری مرچ ڈالیں 3 سے 4 چمچ دہی اور لیموں کا رس شامل کریں آخر میں ہرا دھنیا ڈال کر چاول ڈالیں اور اتنا پکائیں کہ چاول دم پر آجائیں، پھر انہیں ہری چٹنی یا رائتے کے ساتھ کھائیں، یہ آپ کو ٹھنڈک کے احساس کے ساتھ آپ کا نظامِ ہاضمہ بہتر کرے گا اور معدے کے مسائل کو حل کرے گا۔

اسمودی صحت اور ذائقہ کا حسین امتزاج

https://adstar.network

انسان ہمیشہ ہی ہر کام میں خوب سے خوب تر کی جستجو میں لگا رہتا ہے، اسی طرح کھانے تیار کرنے اور اسے مزید صحت بخش بنانے کے لیے بھی نت نئی ترکیبیں آزماتا رہتا ہے ان ہی میں اسمودی بھی شامل ہے۔
اسمودی کسی بھی ملک شیک کے مقابلے میں قدرے گاڑھا مشروب کہلاتی ہے جو کہ تازہ پھل، سبزیوں، ان کے جوس، دودھ یا دہی ڈال کر تیارکی جاتی ہے۔ اس میں چینی اوردودھ کا ستعمال کم کیا جاتا ہے جبکہ ان کی جگہ بھی پھلوں اور سبزیوں کا رس اور مٹھاس کے لیے شہد کو ترجیح دی جاتی ہے اسی بنا پر یہ ہر طرح سے غذائیت سے بھر مشروب کہلاتی ہے۔
یہاں پرچند مزےدار اسمودی کی ترکیبیں پیش کی جارہی ہیں جو آپ کے لیے صحت اورغذائیت سے بھرپور ثابت ہوں گی۔

اجزا:

دہی آدھا کپ، اسٹرابیری دو کپ، کیلا ایک عدد، پینٹ بٹردو چائے کے چمچے، برف حسب ضرورت۔

ترکیب:

ان تمام اجزائ کو بلینڈر میں ڈال کر اچھی طرح بلینڈ کرلیں، مزے دار اسمودی تیار ہے۔

غذائیت:

کیلوریز 327، پروٹین 18 گرام، کاربوہائیڈریٹ 55 گرام، چکنائی 7 گرام، فائبر 9 ملی گرام، سوڈیم 94 ملی گرام۔

ٹراپیکل مارننگ اسمودی

اجزا:

دہی پون کپ، کٹے ہو ئے آم آدھا کپ، کٹا ہواپائن ایپل آدھا کپ، کیلا ایک عدد، پسے ہوئے السی کے بیج دو کھانے کے چمچے۔

ترکیب:

تمام اجزا کو بلنیڈر میں ڈال کر اچھی طرح بلینڈ کرلیں۔

غذائیت:

کیلوریز 368، پروٹین 22 گرام، کاربوہائیڈریٹ 60 گرام، فیٹ 7 گرام، فائبر 9 گرام، سوڈیم 68 ملی گرام۔

پالک اسمودی

دہی پون کپ، پالک دوکپ، امرود ایک عدد، انگورچند دانے، ایواکاڈودو کھانے کے چمچے، لیموں کا رس دو کھانے کے چمچے۔

ترکیب:

تمام اجزائ کو بلینڈر میں ڈال اچھی طرح لینڈ کرلیں۔ صحت سے بھرپور اسمودی تیارہے۔

غذائیت:

کیلوریز 316، پروٹین 21 گرام، کاربوہائیڈریٹ 52 گرام، فیٹ 6 گرام، فائبر 9 گرام، سوڈیم 115 ملی گرام۔

اسکول سے واپسی پر یہ مزیدار وَن بائٹ سموسے تو آپ نے بھی کھائے ہوں گے ۔۔۔ آج جانیئے ان کو گھر میں بنانے کی آسان ٹپ

https://adstar.network

اسکول کی چھٹی کے بعد جب سڑک پر باہر نکلتے ہیں تو لائن سے ٹھیلے والے مختلف چیزیں بیچنے کے لئے کھڑے ہوتے ہیں۔ اور بھوک کے وقت میں سموسے نظر آ جائیں تو لگتا تھا جیسے اپنا انتظام تو یہیں ہوگیا ہو۔ پھر یہ مزیدار ٹھیلے والے وَن بائٹ سموسوں کو تو دیکھ کر جان میں جان آ جاتی ہے کیونکہ یہ ہوتے ہی اتنے مزیدار کرارے اور خستہ کے دل ہی نہ چاہے کھاتے کھاتے رکنے کا۔

یقیناً آپ نے بھی اپنے اسکول سے واپسی پر یہ سموسے ضرور کھائے ہوں گے، تو آج کے-فوڈ آپ کے بچپن کی یادیں تازہ کرتے ہوئے آپ کو ان کزارے وَنبائٹ سموسوں کی ریسیپی بھی بتارہا ہے تاکہ آپ گھر میں ہی ان کو بنا کر وہ لطف اٹھا سکیں۔

اجزاء:

٭ اس کے لئے آپ کو چاہیئے ون بائٹ سموسمہ پٹیاں۔
٭ بیکنگ پاؤڈر، سرکہ، انڈہ ۔

ٹپ:

٭ سموسوں کی چھوٹی پٹیوں کو گھر لے آئیں اور بس ون بائٹ سموسمے انہی سے بنائیں۔
٭ ایک پیالی میں دو چمچ بیکنگ پاؤڈر اور آدھا چمچ سرکہ ڈال کر مکس کریں اور سموسوں کی پٹیوں کو اس میں کچھ دیر رکھ کر ڈھکن ڈھک دیں۔
٭ اس کے بعد پٹیوں سے سموسے کی شیپ بنائیں۔
٭ اب کڑائی میں تیل گرم کریں۔
٭ ایک پیالی میں انڈہ پھینٹیں اور سموسوں کو اس میں ڈپ کریں۔
٭ جیسے ہی تیل گرم ہو جائے اس میں یہ سموسے ڈال کر ڈیپ فرائی کرلیں۔
لیجیئے مزیدار گرما گرم ون بائٹ سموسے تیار ہیں۔
اب آپ ان کو ہری چتنی، کیچپ، لال چٹنی یا مایونیز کے ساتھ سروو کرلیں۔

فلننگ:

ان میں کسی چیز کی فلننگ نہیں ہوتی، لیکن اگر آپ کرنا چاہیں تو ابلے آلو یا گوبھی ڈال کر بنا سکتی ہیں۔

دل کی صحت کے لیے چند مفید غذائیں

دنیا بھر میں اموات کی چند بڑی وجوہات میں عارضہ دل ایک بڑی وجہ ہے۔ خون کی شریانوں میں مسائل پیدا ہونے کی بنیادی وجوہات میں ناقص غذا، تمباکو نوشی اور جسمانی سرگرمیوں سے دوری شامل ہیں اور یہی امراض قلب کا سبب بنتے ہیں۔ جبکہ ہائی بلڈ پریشر، انفیکشن وغیرہ بھی یہ خطرہ بڑھاتے ہیں۔ تاہم صحت مند طرز زندگی اور اِن غذاؤں کے استعمال سے خود کو امراض قلب سے دور رکھ سکتے ہیں۔

دلیہ:
دلیہ کا روزمرہ استعمال نقصان دہ کولیسٹرول کی سطح میں کافی حد تک کمی لانے میں مدد دیتا ہے جس سے امراض قلب کا خطرہ کم ہوتا ہے۔

سبزپتوں والی سبزیاں (پالک، ساگ)
پالک ساگ کو ہفتے میں دو بار لازمی خوراک کا حصہ بنائیں کیونکہ پالک، ساگ دل کو زیادہ صحت مند بناتی ہیں، ان میں موجود کیروٹین اینٹی آکسیڈنٹ کا کام کرکے جسم کو نقصان دہ مرکبات سے بچاتے ہیں۔

ٹماٹر:
ٹماٹروں میں دل کے لیے فائدہ مند پوٹاشیم کی مقدار کافی زیادہ ہوتی ہے۔ جبکہ یہ اینٹی آکسڈنٹ لائیکوپین کے حصول کا بھی اچھا ذریعہ ہے۔ یہ اینٹی آکسیڈنٹ نقصان دہ کولیسٹرول سے نجات میں مدد دے سکتا ہے۔ جس سے خون کی شریانیں کشادہ رہتی ہیں اور ہارٹ اٹیک کا خطرہ کم ہوتا ہے۔ آپ ٹماٹر بصورت مزیدار چٹنی بنا کر بھی کھاسکتے ہیں۔

تلبینہ سے ڈپریشن کا علاج

https://adstar.network

تلبینہ ایک بہترین غذا ہے جو آپ کو دل کی بیماریوں سے بچاتی ہے ۔ تلبینہ آپ کے دل کی اہم شریانوں میں خون کی گردش جاری رکھتا ہے اور انہیں بلاک ہونے سے بچاتا ہے ساتھ ساتھ arteriosclerosisسے بھی محفوظ رکھتا ہے ۔

تلبینہ انجائنا سے بچاتا ہے ۔ ذہنی دباؤ کے شکار لوگوں کے لیے تلبینہ ایک بہترین غذا ہے ۔ تلبینہ جوء کے آٹے سے بنائی ہوئی ایک خاص قسم کی کھیر سے جسے دودھ میں پکایا جاتا ہے اور شہد سے میٹھا کیا جاتا ہے ۔نبی ﷺ نے تلبینہ کا طب ونبوی ﷺ میں شامل کیا اور ایسے لوگوں کو کھانے کو کہا جو کے شدید غم ، ذہنی دباؤ اور دل کی بیماریوں کا شکار ہیں ۔

حضرت عائشہؓ سے روایت ہے کہ جب کہیں کسی کا انتقال ہوجاتا تھا تو لوگ آتے اور افسوس کرکے چلے جاتے ۔ جب گھر میں صرف اہل و عیال رہ جاتے تو حضرت عائشہؓ اُن سے فرماتیں کہ ایک برتن میں تلبینہ بنائیں اور سب گھر والے کھائیں کیونکہ انہوں نے رسول اللہ ﷺ کو کہتے ہوئے سنا ہے کہ تلبینہ دل کو سکون پہنچاتا ہے اور اُن لوگوں کے لیے بہت مفید ہے جو ذہنی دباؤ اور شدید غم کا شکار ہیں ۔

تلبینہ میں انسان کے دل کو سکوں بخشنے کی طاقت موجود ہے ۔ تلبینہ کا استعمال دماغ کا تیز کرتا ہے ۔ ایسے لوگ جو ذہنی دباؤ کا شکار ہیں وہ تلبینہ کا استعمال کریں ، تلبینہ زیادہ عمر کے لوگوں کے لیے بہت مفید ہے ۔

تلبینہ بیک وقت ایک غذا بھی ہے اور ایک دوا بھی ۔ تلبینہ نہ صرف آپ کو جسمانی طاقت دیتا ہے بلکہ ذہنی سکون بھی فراہم کرتا ہے ۔ رسول اللہ ﷺ نے بہت سے مقامات پر تلبینہ کی اہمیت بیان کی ہے اور کہا ہے کہ تلبینہ شدید غم اور ذہنی دباؤ سے سکون دیتا ہے اور دل و دماغ کو کسی بھی صدمے سے نکلنے میں مدددیتا ہے ۔

تلبینہ بنانے کا طریقہ
جوء کا آٹا ۔۔۔۔۔۔۔۔آدھ کپ
دودھ ۔۔۔۔۔۔۔۔۔دو کپ
شہد ۔۔۔۔۔۔۔۔۔حسب ضرورت

بنانے کا طریقہ
دو کپ دودھ میں جوء کے آٹے کو گھول لیں تاکہ گھٹلی نہ بنے
اب اس آمیزے کو ایک پتیلی میں ڈال کر اُبال لیں اور مسلسل چمچ چلاتے رہیں تا کہ گھٹلیاں نہ بنیں
کم سے کم دو اُبال آنے تک پکائیں
چولہے سے اُتار کر ٹھنڈا کریں اور شہد ڈال کر پیش کریں

Health Benefits Of Ginseng Tea

جنسگ چائے کے 6حیران کن فائدے
جنسنگ ایک ٹیوب جیسی جڑی بوٹی ہے جو کہ بہت سے طبی فوائد کی حامل ہے ۔تحقیق سے ثابت ہوا ہے کہ جنسگ شوگر ، بلڈ پریشر ،انرجی بوسٹنگ میں فائدہ مند ثابت ہوتی ہے ۔
چائنیز اسے اپنی دواؤں میں استعمال کرتے ہیں ، جلد کو جوان رکھنے کے لیے اس سے ٹانک بھی تیار کیا جاتا ہے ۔ یہ بچے اور بڑوں دونوں کے لیے یکسا ں مفید ہے ۔

جنسنگ چائے پینے کے فائدے :

وزن گھٹانا :
جسنگ چائے کی مدد سے وزن کم کیا جا سکتا ہے ۔ جنسنگ آپ کے نظام ہضم کو تیز کرتی ہے جس کی وجہ سے آپ پورا دن تروتازہ محسوس کرتے ہیں ۔ سبز چائے اور جنسنگ وزن کم کرنے میں مدد ضرور کرتے ہیں لیکن ان کے استعمال کے ساتھ ساتھ آپ کو اپنی خوراک پر کنٹرول رکھنا ہوگا اور ساتھ ساتھ تھوڑی بہت ورزش بھی ضروری ہے ۔

ہارمونز کے بے ترتیبی :
جنسنگ چائے خواتین کے لیے بہت مفید ہے کیونکہ یہ ہارمونز کی بے ترتیبی کو درست کرتی ہے اور اس میں موجود اجزاء بریسٹ کینسر سے لڑنے میں مدد کرتے ہیں ۔ چائنا کی خواتین سالوں سے جنسنگ کی چائے کا استعمال کرتی ہے تاکہ اُن کے cyclesدرست رہیں اور PMSمیں انہیں مددملے ۔

دل کی بیماریوں سے نجات :
جنسنگ چائے میں موجود اینٹی آکسیڈنٹس دل کی بیماریوں سے محفوظ رکھتے ہیں ۔ “Prescription for herbal healing” کتا ب میںDr Philip A Balchلکھتے ہیں کہ جنسنگ چائے heart rate میں اکسیجن کی مقدار کو کم کرتی ہے جس سے دل کے مسلز زیادہ مضبوط ہوتے ہیں اور دل کو موٹاپے سے محفوظ رکھتے ہیں ۔

دماغی اور جسمانی سکون :
جسنگ چائے مں موجود اجزاء آپ کے Staminaکو بڑھاتے ہیں اور انرجی لیول بوسٹ کرتے ہیں ۔ یہ نظام ہضم کو تیز کرتی ہے جس کی وجہ سے طاقت میں اضافہ ہوتا ہے ۔ اس کے علاوہ جسنگ چائے سے دماغ کے سیلز صحیح طرح سے کام کرتے ہیں جو کہ زیادہ سوچنے سے محفوظ رکھتے ہیں اور توجہ بہتر بناتے ہیں ۔

صحت مند جلد :
جنسنگ میں موجود اینٹی آکسیڈنٹس آپ کی جلد کو تروتازہ رکھتے ہیں ۔ ایک تحقیق کے مطابق جنسنگ میں اینٹی ایجنگ اجزاء موجود ہوتے ہیں جو آپ کی جلد کو جوان رکھنے میں مدد کرتے ہیں ۔

کینسر سے حفاظت :
جنسنگ میں اینٹی ٹیومر خصوصیات موجود ہیں جو کہ پھیپھڑے ، گردے ، پتے ، معدے اور بریسٹ کینسر سے حفاظت کرتی ہیں ۔ تحقیق سے یہ ثابت ہوا ہے کہ جنسنگ کا استعمال smoking cancer کو روکتا ہے ۔ سیگریٹ نوشی کرنے والوں کو بھی جننگ چائے ضرور استعمال کرنی چاہیے ۔

6 Amazing Health Benefits of Ginseng Tea

Ginseng is a plant tuber credited with various tonic and medicinal properties. Ginseng, an oval-shaped root, is among the most popular herbal remedies. It is believed to boost energy, lower blood sugar and cholesterol. For centuries, ginseng has been used in traditional Chinese medicine. Ginseng is known as a life-enhancing tonic that is stimulating in the young, but restorative and even sedative in the aged and ill.

Here are some ways that drinking ginseng tea may benefit you:

1. Weight Loss:
Ginseng tea may aid weight loss, as it is known to be a natural appetite suppressant, Just like green tea, ginseng will speed up your metabolism and make you feel more energetic throughout the day. Nonetheless, neither green tea nor ginseng are miracle herbs that will work their magic overnight – this is why you need to give them a ‘helping hand’ and improve your diet to benefit from them to the fullest.

2. Restores Hormonal Balance:
Ginseng tea is particularly good for women, as it can help bring about a hormonal balance in their bodies and may consequently guard against breast cancer, endometriosis and other problems caused by hormonal imbalances. Women in China have used ginseng for centuries to regulate menstrual cycles and calm PMS symptoms.

3. Promotes Heart Health:
Ginseng tea is a rich source of antioxidants, which are good for heart health. Moreover, according to the book ‘Prescription for Herbal Healing’ by Phyllis A. Balch, ginseng has been shown to slow the heart rate and reduce the heart’s demand for oxygen. The book says that ginseng root can increase the strength with which heart muscle can contract and hence, protects the heart from myopathy.

4.Stimulates both physical and mental health
Ginseng tea is a beverage that helps increase stamina as well as boost energy levels. Ginseng tea can also effectively regulate metabolism, which can subsequently increase energy levels. Moreover, ginseng tea can act as a stimulant for the brain cells and help improve concentration and thinking ability.

5. Promotes Skin Health:
Antioxidant-rich herbs and spices like ginseng can promote skin health, due to the inflammation-fighting properties of their active chemicals and compounds. According to the book ‘The Miracle of Herbs and Spices’ by Dr. Bahram Tadayyon, ginseng has anti-ageing properties for the skin, due to the presence of free radical-fighting antioxidants.

6. Protects against cancer:
Ginseng has anti-tumor properties and is protective against some kinds of cancer including lung, liver, pancreatic, ovarian, and stomach cancers. Moreover, research has shown that smokers who drink ginseng tea are at a lower risk for developing smoking-related cancers than smokers who don’t drink it.

When we talk about ginseng tea benefits, there are so many benefits to discuss. One of the ginseng tea benefits is that it freshen the skin and helps in losing weight. Speeding up metabolism is also counted in ginseng tea benefits. One of the most important ginseng tea benefits is that it includes the boosting of immune system.
Ginseng tea benefits are so many to discuss. Hope you will find this information about ginseng tea benefits very useful. Thank you for reading ginseng tea benefits.

5 Best Dahi Bhalla Recipes – Homemade Dahi Bhalla Recipes Step by Step

https://adstar.network

1. Dahi Bhalla

 Dahi bhalla is a very popular side dish, appetizer and snack recipe in India. Dahi bhalla recipe actually originates from India and has spread like wildfire to the entire Indian subcontinent. Making dahi bhalla is super easy and takes less time. Moreover, it is considered as a healthy version of the classic dahi bara, mainly due to its ingredients consisting of chickpeas, fried flour dumplings, chaat masala, yogurt and chutney. It is both healthy and a real treat during these hot summer days.

2. Burns Road ki Dahi Phulki

 Burns Road ki Dahi Phulki is a traditional recipe that consists of fried flour dumplings that are the most well-known and soft fried recipes in Pakistan. The burns road ki dahi phulki recipe got its name from the popular area in Karachi called “burns road’’ where various vendors and stalls sell delicious dahi phuki. And if you want to bring the similar taste at home, all you need is moong lentils flour, soda by carbonate, water, salt, and sugar. It’s the same recipe as the classic dahi phulki but three amazing ingredients change it all, such as whole red chili, cumin seed, and black salt. By following these simple instructions, you’ll have the delicious burns road ki dahi phulki in your mouth right at home.

3. Besan ke dahi baray

 Besan ke dahi baray is dish that comes off as an alternative to the classic dahi baray (which are made from Moong lentils) but is an excitement to eat in every bite. Besan ke dahi baray recipe is instead made from besan (gram flour) to form round phulkis and the rest of the technique is the same. Besan ke dahi baray are very easy to prepare and can be served with tomatoes and chaat masala. It can highly enjoy during festive occasions, such as Ramadan and Eid. Even can be enjoyed till late night as a midnight snack.

4. Meethi dahi phulki

 Meethi dahi phulki comes off as a sweet dessert version of the classic dahi phulki which is a bit less sweet as compared to this dish. Meethi dahi phulki recipe takes the same technique for preparing but includes a little twist that changes the whole recipe to a glorifying state and the phulkis literally melt in your mouth. The flavors spread like wildfire into your mouth with the most desired sweetness circulating around your mouth before you finally swallow it. Not only is this a great recipe for dahi bara lovers, meethi dahi phulki is a great diet snack for people who are looking to gain less calories while still eating something good and healthy.

5. Kamodia (Gujrati dahi baray)

 Kamodia (Gujrati dahi baray) are a colorful delight, unlike its other alternatives, foodies can enjoy this dish with a ray of different colors and a burst of mouth-watering flavors in the mouth. Kamodia (Gujrati dahi baray) recipe is too good for you in the healthy way and can be easily prepared using the same technique. Just like the other varieties, this one also adds a little twist which is consisting of the garnishment that differs it from the others.
Kamodia (Gujrati dahi baray) can be served with green chutney or mint chutney and can be sprinkled with chaat masala, crushed chillis and even imli ki chutney for more flavors. Try this recipe at home if you want to experience true Gujrati cuisine.

Dahi bara is a popular side dish, appetizer and snack in the Indian subcontinent. Best Dahi Bhalla Recipe is prepared from soaking vadas (fried flour balls) in whipped dahi (yogurt). Homemade Dahi Bhalla is a group of dumplings that can be easily made at home. Wash the fried flour balls and soak them overnight. After they’re completely soaked, ground them into a batter for baras and then cook in hot oil until golden brown. Once again, the deep fried baras are transferred into water for soaking and then transferred to whipped yogurt. They are usually chilled before serving with dahi bara masala. Other varieties of dahi bara include, dahi bara aloo dum, dahi bhalla, and dahi phulkay. You can learn how to make dahi baray English translation, where you can learn what is dahi bhalla, dahi bhalla meaning in English. With this much guide from our side, there’s no way, you can fail this easy dahi bara recipe!

کیا آپ جانتے ہیں کہ کھانے کے بعد میٹھا کھانا صحت کے لئے فائدہ مند ہے یا نقصان دہ؟

اس بات کو سب ہی تسلیم کریں گے ان کو میٹھی چیزیں پسند ہیں۔تاہم غذائی ماہرین ہمیشہ سے چینی کے کم استعمال پر زور دیتے ہیں اس کی ایک وجہ تو یہ ہے کہ چینی صرف کیلوریز حاصل کرنے کا ذریعہ ہے اس میں کو ئی غذائیت نہیں ہے۔اس کا جسم میں دیگر غذا کی طرح کوئی کام نہیں ہے یہ چربی کے خلیوں میں جمع ہو کروزن بڑھنے کا باعث بنتی ہے۔کھانے کے بعد میٹھا کھانا ایک عام عمل ہے دیکھا جائے تو کوئی نقصان نہیں ہے لیکن کسی بھی چیز کی زیادتی اور مستقل ہونا ضرور نقصان کا سبب بن سکتا ہے۔ہم جس معاشرے میں رہتے بچپن سے دیکھتے آئیں ہیں کسی بھی دعوت میں میٹھا ہمیشہ نمکین کے بعد پیش کیاجاتا ہے یعنی کسی بھی کھانے کا اختتام میٹھے پر کیا جاتا ہے اسی لئے ہمیں ہر کھانے کے بعد کچھ میٹھے کی طلب ہوتی ہے غذائی ماہرین کا اس ضمن میں کہنا ہے کہ کھانے کے بعد جسم کا بنیادی کام کھانے کو ہضم کرنا ہے اور اس کے لئے کافی توانائی کی ضرورت ہوتی ہے چینی فوری توانائی حاصل کرنے کا ذریعہ ثابت ہوتی ہے،اسی لئے ہر کھانے کے بعد میٹھے کی خواہش بیدار ہوجاتی ہے۔اس کے علاوہ بھی کچھ اور وجہ ہیں جانتے ہیں کہ وہ کیا ہیں۔

نفسیاتی وجوہات

اکثر معاملات میں میٹھے کی طلب جسمانی سے زیادہ نفسیاتی ہوتی ہے یعنی یہ خواہش آپ کے کھانے کو میٹھے سے ختم کرنے کی عادت سے پیدا ہوتی ہے،چینی اور چکنائی سے بھر پور غذا کا باقاعدہ استعمال دماغ میں ایک مخصوص کیمیکل وائرنگ کا باعث بنتا ہے جو خودبخود اس طرح کے کھانوں کی خواہش کو جگا دیتا ہے،اگر آپ نے ہمیشہ کھانے کے اختتا م کو میٹھی چیز سے جوڑا ہے اور کبھی اس سے انحراف کرنا بھی چاہیں تو یہ مشکل ہوگا۔جبکہ اس کی ایک و یہ بھی جہ ہے کہ جب آپ کھانا کھاتے ہی تو یہ آپ کے مزاج کو بہتری کی طرف لے جاتا ہے اور یہ میٹھے کھانے سے مزید بڑھتا ہے،کیونکہ آپ کا دماغ ایک کیمیکل خارج کرتا ہے جسے سیروٹونن کہا جاتاہے۔جو آپ کو خوش اور پر سکون رکھتا ہے، یعنی میٹھا کھا کر مزاج خوشگوار ہو جاتا ہے۔

کاربوہائیڈریٹ سے بھر پور کھانا

اگر آپ کا کھانا کاربوہائیڈریٹ سے بھرا ہوا ہے اور ایسی بات نہیں یہ کہ صحت کے حوالے سے غلط ہے لیکن یہ کھانے کے بعد میٹھے کی طلب بڑھا تاہے،اس کی وجہ یہ ہے کہ کاربویائیڈریٹ غذا میں شامل رکھنے سے خون میں چینی کی سطح بلند ہو جائے گی اور پھر آپ کو میٹھا کھانے کی طلب بڑھے گی۔

زیادہ نمک والے کھانے

جن کھانوں میں نمک کی مقدار زیادہ ہو تو جسم عام طور پر توازن پیدا کرنے کے لئے میٹھے کھانے کی خواہش رکھتا ہے،آپ نے کبھی سوچا کہ پیزا،برگر اور فرائز کے ساتھ سوفٹ ڈرنک پینا کیو ں چاہتے ہیں؟وجہ یہی ہو سکتی ہے۔

پانی کی کمی

ایک اور اہم وجہ میٹھے کی طلب کا ہونا وہ ہے خراب ہاضمہ جو کہ پانی کی کمی سے مشروط ہے۔جب آپ کھانا کھاتے ہیں تو اور اس کے بعد پانی نہیں ہوتا ہے تو کھانا مناسب طریقے سے ہضم نہیں ہو پاتاتو آپ میں میٹھے کی خواہش بڑھتی ہے۔

اس طلب کو کیسے کم کیا جائے

چینی کو مکمل طور پر غذا سے ختم نہ کریں،کھانے کے بعد میٹھا کھانا قدرتی عمل ہے اس لئے اپنی ذات پر جبر نہ کریں،آپ اپنے پسندیدہ میٹھے سے لطف اندوز ہو سکتے ہیں مگر تھوڑی مقدار لیں۔اور میٹھے کے لئے چینی کے بجائے پھلوں،خشک میوہ جات اور شہد کو اپنی غذا کا حصہ بنائیں،یہ میٹھے کی طلب کی تسکین کے ساتھ آپ کو صحت بھی فراہم کریں گے۔
اپنے کھانے میں متوازن غذا کو شامل کریں بہت زیادہ کاربوہائیڈریٹ کی جگہ فائبر کو شامل کریں تاکہ خون میں چینی کی سطح مستحکم رہے۔زیادہ نمک والے کھانوں سے پر ہیز کریں۔
اس طلب کو کم کرنے کے لئے کھانے کے بعد دانت برش کرنا بھی فائدہ مند ہے،شوگر فری چیونگم لینابھی افاقہ دے گی۔ کہاجا تا ہے کہ اگر ناشتہ میں کچھ میٹھا کھا لیا جائے تو وہ دن بھر میٹھے کی خواہش کو بڑھنے نہیں دیتا، اس کی وجہ یہ ہے کہ دماغ میں موڈ کو بہتر کرنے والا سیروٹونن دن کے آغاز اپنی بلند ترین سطح پر ہوتا ہے اور میٹھے کی طلب کم ہوتی ہے آپ دن کے آغاز میں میٹھا کھا کر اسے مزید تسکین فراہم کر دیتے ہیں۔
یاد رکھیں اگر کوئی بھی غذا اعتدال میں ہو تو اس کا کچھ نقصان نہیں ہوتا۔

سردیوں میں شکر قندی کھانے سے ہمارے جسم میں کیا تبدیلی آتی ہے؟ جان کر آپ دنگ رہ جائیں گے

شکر قندی ایک مشہور جڑ ہے ۔ ہندوستان اور پاکستان میں ہر جگہ بکثرت پیدا ہوتی ہے ۔ اگر چہ یہ کھانے میں لذیذ ہوتی ہے اور قابل قدر غذائیت رکھتی ہے لیکن قیمت کے اعتبار سے سستی ہوتی ہے ۔ اس لئے امیر لوگ اس کی طرف بہت کم رغبت کرتے ہیں ۔ البتہ غریب لوگ نہایت شوق اور رغبت سے کھاتے ہیں ۔

بظاہر نشاستہ اور شکر کا مجموعی ہے ۔ درحقیقت یہ چیزیں شکر قندی کا جزو اعظم ہیں لیکن اس میں دوسرے لطیف اجزاء بھی پائے جاتے ہیں ۔ چنانچہ اس میں وٹامن اے کافی مقدار میں ہوتے ہیں نیز فولاد اور بعض دیگر معدنی اجزاء بھی کیمیاوی تجربہ کرنے پر اس میں ملتے ہیں ۔ لہذا شکر قندی بدن کو تغذیہ اور توانائی بخشنے والے غذائی اجزاء کا مجموعہ ہے ۔ غذائیت کے لحاظ سے آلو پر فوقیت رکھتی ہے ۔

شکر قندی کو بھون کر بھی کھاتے ہیں جس کا طریقہ یہ ہے کہ شکرقندی کو نہایت گرم ریت میں یا گرم راکھ میں دبا دیتے ہیں ۔ جب شکر قندی پک جاتی ہے تو نکال لیتے ہیں چھیل کر کھاتے ہیں ۔ اس میں شک نہیں کہ اس طرح بھونی شکر قندنسبتاً زیادہ لذیذ ہوتی ہے ۔ البتہ اُبالنے کے مقابلے میں اس طرح بھوننے میں زیادہ تکلیف کرنا پرتی ہے جو ہر گھر میں آسانی سے نہیں ہو سکتا ۔

شکر قندی کا مفید و مزیدار حلوہ :
بعض لوگ شکر قندی کا حلوہ بنا کر بھی کھاتے ہیں ۔ یہ حلوہ بدن کو تغذیہ اور تقویت بخشتا ہے ۔

شکر قندی کا حلوہ بنانے کا طریقہ :
 شکر قندی کا باریک باریک تراش کر خشک کرلیں ، اس کے بعد کوٹ چھان کر آٹا بنائیں ، روزانہ صبح کے وقت ایک چھٹانک یہ آٹا لے کر ایک چھٹانک دیسی گھی میں بھونیں اور تین چھٹانک چینی کا قوام شامل کرکے حلوہ تیار کریں ۔
اگر چاہیں تو اسمیں مغز بادام، مغز پستہ اور ناریل باریک باریک تراش کر شامل کریں ۔

سردیوں میں کھانے سے درج ذیل فوائد حاصل کرسکتے ہیں ۔
۱۔ دماغ کو طاقت دیتی ہے ۔
۲۔ جسم کو موٹا کرتی ہے ۔
۳۔ قوت باہ مضبوط کرتی ہے ، بشرطیکہ چینی ملا کر کھائی جائے ۔
۴۔ جریان کے لئے بے حد مفیدہے ۔
۵۔ اس کا حلوہ بنا کر کھانا اکسیر کا درجہ رکھتا ہے ۔
۶۔ کپکپی اور دانت بجنے سے آرام پہنچاتا ہے ۔

شکر قندی کے نقصانا ت :
۱۔ قابض ہے اس لئے کمزور معدے والے احباب اجتناب کریں ۔
۲۔ پیٹ میں بعض دفعہ اپھارہ پیدا کرتی ہے ۔
۳۔ جسم کو موٹا کرتی ہے ، کرسی پر بیٹھ کر کام کرنے والوں کے لئے مناسب نہیں ۔
۴۔ یہ دیر ہضم ہے ، البتہ اگر چینی یا شہد ملا کر کھائی جائے تو پھر اس کی یہ خاصیت ختم ہوجاتی ہے ۔

احتیاط :
ذیابیطس کے مریض شکر قندی استعمال نہ کریں ۔
دل کے مریض بھی اسے استعمال نہ کریں ۔
شکر قندی استعمال کرنے کے بعد تھوڑی سونف چبالینے سے اس کے مضر اثرات دور ہوجاتے ہیں ۔

Open chat
1
Send WhatsApp Message
Welcome From
AD STAR NETWORK
Rotate Your Mobile at Full Screen & Visit Our Page Menu.
اپنے موبائیل کو فل اسکرین روٹیٹ کریں اور پیجز مینو ریڈ کریں۔